مشرقی راسخ الاعتقاد کلیسیا

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں

راسخُ الا عتقاد کلیسیا، (انگریزی: Orthodox Church) کا دوسرا نام "مشرقی راسخُ الا عتقاد کلیسیا" بھی ہے۔ دنیا میں کیتھولک کے بعد یہ مسیحیت کا دوسرا بڑا کلیسیا ہے۔ بنیادی طور پر بیلاروس، بلغاریہ، قبرص، جارجیا، یونان، مقدونیہ، مالدووا، مونٹی نیگرو، رومانیہ، روس، سربیا اور یوکرائن کے ممالک میں اس کے ماننے والے پائے جاتے ہیں۔ ایک اندازے کے مطابق 30 کروڑ لوگ "راسخُ الا عتقاد کلیسیا" سے منسلک ہیں۔[1]

پہلے یہ فرقہ کیتھولک کلیسیا کے تابع تھا، پھر عالم قسطنطنیہ میخائیل کارولاریوس کے عہد 1054ء میں اس سے جدا ہوا۔ اس کلیسیا کی اہم بات یہ ہے کہ اس کے ماننے والے یہ یقین رکھتے ہیں کہ روح القدس صرف خدا باپ سے پیدا ہوئے اور خدا بیٹے سے پیدا نہیں ہوئے۔ راسخ الاعتقاد کلیسیاؤں کا کوئی رئیس نہیں ہوتا (جیسے کیتھولک کلیسیا میں پوپ ہوتا ہے) بلکہ ہر ایک کلیسیا دوسرے سے علاحدہ شمار کیا جاتا ہے اگرچہ عقیدہ میں سب متفق ہیں۔

نگار خانہ[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Greek Orthodox Archdiocese of America (2016)۔ "The Greek Orthodox Archdiocese of America"۔ اخذ کردہ بتاریخ 18 دسمبر 2016۔ "The Orthodox Church today, numbering over 250 million worldwide, is a communion of self governing Churches, each administratively independent of the other, but united by a common faith and spirituality."