بلقان

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
بلقان
جغرافیہ
محل وقوع جنوب مشرقی یورپ
بلند ترین نقطہ 2,925 میٹر (9,596 فٹ)
بلند ترین مقام موسالا
مکمل طور پر خود مختار ریاستیں بلقان میں
سب سے بڑا شہر تیرانا
سب سے بڑا شہر سرائیوو
سب سے بڑا شہر صوفیہ
سب سے بڑا شہر ایتھنز
سب سے بڑا شہر اسکوپیہ
سب سے بڑا شہر پوڈگوریکا
آبادیات
نام آبادی بلقان
آبادی تقریباْ 60 ملین
بلقان کا نقشہ

بلقان (balkans) جنوب مشرقی یورپ کے خطے کا تاریخی و جغرافیائی نام ہے۔ اس علاقے کا رقبہ 5 لاکھ 50 ہزار مربع کلومیٹر اور آبادی تقریبا 55 ملین ہے۔ اس خطے کو یہ نام کوہ بلقان کے پہاڑی سلسلے پر دیا گیا جو بلغاریہ کے وسط سے مشرقی سربیا تک جاتا ہے۔

اسے اکثر جزیرہ نما بلقان بھی کہتے ہیں کیونکہ اس کے تین جانب سمندر ہے جن میں مشرق میں بحیرہ اسود اور جنوب اور مغرب میں بحیرہ روم کی شاخیں (بحیرہ ایڈریاٹک، بحیرہ آیونین، بحیرہ ایجیئن اور بحیرہ مرمرہ) ہیں۔

جنوب مشرقی یورپ بحیرہ ہائے ایجین، ایڈریاٹک اور اسود کے ساحلوں سے شروع ہوکر وسطی یورپ تک پھیلا ہوا علاقہ ہے۔

مختصر تاریخ[ترمیم]

قدیم یونان یورپی تہذیب کی جائے پیدائش ہے جس کے آثار آج بھی ماضی کی انسانی عظمت کے گواہ ہیں۔

علاوہ ازیں 1990ء کی دہائی کے اوائل تک البانیہ اور بلغاریہ اشتراکی اقتدار کے زیر اثر رہے اور خطے کا بقیہ علاقہ اشتراکی ریاستوں کے اتحاد یوگوسلاویہ کا حصہ تھا جو 1991ء میں خانہ جنگی کے نتیجے میں اب کئی حصوں میں منقسم ہو گیا ہے۔

جغرافیائی خصوصیات[ترمیم]

جنوب مشرقی یورپ کا بیشتر علاقہ پہاڑی ہے جن میں سلسلہ ہائے کوہ جنوب مغرب سے شمال مشرق کی جانب ہیں۔ دینارک الپس ڈیلماٹین ساحل کے ساتھ ساتھ چلتا جاتا ہے جبکہ کوہ پنڈس یونان میں اسی طرح ساحل کے ساتھ پھیلا ہوا ہے۔ بحیرہ ایجیئن میں قدیم پہاڑی سلسلے کے ڈوبنے سے کئی جزائر وجود میں آئے جو بحیرہ ایجیئن کہلاتے ہیں۔

جزیرہ نما بلقان[ترمیم]

جزیرہ نما بلقان

جزیرہ نما بلقان جنوب مشرقی یورپ کا ایک علاقہ ہے جو کہ تین طرف سے پانی سے گھرا ہوا ہے۔ بحیرہ ایڈریاٹک اس کے مغرب میں، بحیرہ روم (بشمول بحیرہ ایجیئن) اور بحیرہ مرمرہ اس کے جنوب میں اور بحیرہ اسود اس کے مشرق میں واقع ہیں۔

علاقے جن کی سرحدیں جزیرہ نما بلقان میں جزوی یا مکمل طور پر موجود ہیں:

علاقے جو کہ زیادہ تر جزیرہ نما بلقان کے باہر واقع ہیں:

بلقان[ترمیم]

بلقان، سیاسی

بلقان مندرجہ ذیل علاقوں پر مشتمل ہے: [1]

آبادی کی خصوصیات[ترمیم]

یونان کی بیشتر آبادی شہری ہے اور ملک کے 50 فیصد سے زائد باشندے ایتھنز اور سالونیکا میں رہتے ہیں۔ بلغاریہ میں بھی آبادی کی اکثریت شہروں میں رہتی ہے جبکہ البانیہ اور مقدونیہ میں تقریباً نصف آبادی دیہی ہے۔ بوسنیا و ہرزیگووینا، سربیا، مونٹی نیگرو اور کروشیا کے افراد خانہ جنگی کے بعد نسلی بنیادوں پر منقسم ہو کر اب الگ الگ رہتے ہیں۔

علاقہ کل آبادی جزیرہ نما میں * کثافت متوقع زندگی
Flag of Albania.svg البانیا 2,831,741[5] 2,831,741 98.5/کلومیٹر2 77.4 سال
Flag of Bosnia and Herzegovina.svg بوسنیا و ہرزیگووینا 3,839,737 [6] 3,839,737 75.0/کلومیٹر2 74.9 سال
Flag of Bulgaria.svg بلغاریہ 7,364,570 [7] 7,364,570 66.4/کلومیٹر2 73.0 سال
Flag of Croatia.svg کروشیا 4,290,612 [8] 2,700,000 75.8/کلومیٹر2 77.3 سال
Flag of Greece.svg یونان 10,815,197 [9] 10,815,197 81.7/کلومیٹر2 81 سال
Flag of Italy.svg اطالیہ علاقے کا حصہ نہیں (دیکھیے [1]) ~330,000 [10]
Flag of Kosovo.svg کوسووہ[a] 1,733,872 [11] 1,733,872 178.7/کلومیٹر2
Flag of Macedonia.svg مقدونیہ 2,057,284 [12] 2,057,284 80.0/کلومیٹر2 74.2 سال
Flag of Montenegro.svg مونٹینیگرو 625,266 [13] 625,266 45.3/کلومیٹر2
Flag of Romania.svg رومانیہ 19,042,936 [14] 832,141 90.2/کلومیٹر2 72.5 سال
Flag of Serbia.svg سربیا 7,120,666 [15] ~3,500,000 91.9/کلومیٹر2 73.9 سال
Flag of Slovenia.svg سلووینیا علاقے کا حصہ نہیں (دیکھیے [1]) ~360,000 [16]
Flag of Turkey.svg ترکی علاقے کا حصہ نہیں (دیکھیے [1]) 10,620,739 [17]
بلقان ** 59,764,374 (بغیر ترکی, سلووینیا اور اطالیہ کے حصے)
70,610,355 (بشمول ترکی, سلووینیا اور اطالیہ کے حصے)
44,888,282 (بغیر شمالی کروشیا اور سربیا)

صنعت[ترمیم]

یونان اور بحیرہ ایجین میں اس کے جزائر سیاحت کے لیے دنیا بھر میں مشہور ہیں۔ علاوہ ازیں بحیرہ اسود کے ساحلی علاقوں میں بھی سیاحت فروغ پا رہی ہے۔ یوگوسلاویہ کی خانہ جنگی کے باعث وہاں کی دیگر صنعتوں کے ساتھ سیاحت کو بھی شدید دھچکا پہنچا لیکن اب یہ دوبارہ اہم صنعت بنتی جا رہی ہے۔ کیمیائی، مہندسی اور جہاز سازی کی صنعتیں اب بھی بلغاریہ کی آمدنی کا اہم ذریعہ ہیں۔

ماحولیاتی مسائل[ترمیم]

صنعتی و ذرائع نقل و حمل کے دھوئیں کے باعث ایتھنز اور زغرب شہر کی فضا آلودہ ہو رہی ہے۔ ایتھنز میں آلودگی کا مسئلہ اس قدر شدت اختیار کر گیا ہے کہ وہاں خاص طور پر ایسے دن منائے جاتے ہیں جن دنوں میں گاڑی چلانا منع ہوتا ہے جبکہ اس فضائی آلودگی سے شہر کے آثار قدیمہ کو بھی شدید خطرات لاحق ہیں۔ بلغاریہ، یونان اور مقدونیہ زلزلے کی متحرک پٹی پر واقع ہیں۔ بڑے زلزلے 1953ء میں جزائر آیونین اور 1963ء میں مقدونیہ کے دارالحکومپ اسکوپے کو شدید متاثر کر چکے ہیں۔ بلغاریہ کا کوزلوڈے جوہری توانائی مرکز زلزلے کی اسی پٹی پر واقع ہے۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ Bideleux, Robert; Taylor, Richard (1996). European integration and disintegration: east and west. p. 249. http://books.google.fr/books?id=bigd3Z2JA4EC&pg=PA249. 
  2. ^ http://books.google.fr/books?id=DHLamAEACAAJ&dq=croatia+not+part+of+balkans&hl=en&sa=X&ei=uL4vUtfOGoSp7Ab1gIHQBg&ved=0CEIQ6AEwAg=en
  3. ^ http://books.google.fr/books?id=8vFeeIodS-AC&pg=PA56&lpg=PA56&dq=slovenia+not+part+of+balkans&hl=en
  4. ^ http://books.google.si/books?id=5jrHOKsU9pEC&lpg=PA21&dq=slovenia%20balkans%20included&pg=PA21#v=onepage&q=slovenia%20balkans%20included&f=false
  5. ^ "Institute of Statistics of البانیہ. 2011 Census Results". http://census.al/default.aspx?lang=en. 
  6. ^ Agency for Statistics of بوسنیا و ہرزیگووینا. Estimate for 2011.
  7. ^ "National Statistical Institute of بلغاریہ. 2011 Census Results". http://www.nsi.bg/census2011/pageen2.php?p2=179. 
  8. ^ کروشیاn Bureau of Statistics. 2011 Census Results.
  9. ^ National Statistical Service of یونان. 2011 Census Results.
  10. ^ National Institute of Statistics of اطالیہ. Estimate for 2009. 236,520 people in Province of Trieste and about 90,000 in the Balkan part of Province of Gorizia.
  11. ^ "Statistical Office of کوسووہ. 2011 Census Results". http://esk.rks-gov.net/rekos2011/?cid=2,40,276. 
  12. ^ "State Statistical Office of مقدونیہ. Estimate for 2010" (مقدونیہn میں). http://www.stat.gov.mk/publikacii/2.4.11.14.pdf. Retrieved 2010-04-17. 
  13. ^ "Statistical Office of مونٹینیگرو. 2011 Census Results". http://monstat.org/eng/page.php?id=57&pageid=57. 
  14. ^ "National Institute of Statistics of رومانیہ. 2011 Census Results." (رومانیہn میں). http://www.insse.ro/cms/files/statistici/comunicate/alte/2012/Comunicat%20DATE%20PROVIZORII%20RPL%202011.pdf. 
  15. ^ "Statistical Office of سربیا. 2011 Census Results". http://webrzs.stat.gov.rs/WebSite/public/PublicationView.aspx?pKey=41&pLevel=1&pubType=2&pubKey=834.  Since the Statistical Office of the Republic of سربیا cannot provide data of کوسووہ's population due to the situation in the terrain, the total population data excludes کوسووہ which سربیا claims as part of its own sovereign territory.
  16. ^ "Statistical Office of سلووینیا. Estimate for 2009". http://www.stat.si/TematskaKartografija/Maplist.aspx?lang=eng&field=5. 
  17. ^ "Turkish Statistical Institute. Registered population as of 2011". http://tuikapp.tuik.gov.tr/adnksdagitapp/adnks.zul?dil=2.