نجم‌ الدین کبری

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں

نجم الدين الكبرى ایک صوفی بزرگ اور افسانوی شخصیت کے حامل ہیں

نام[ترمیم]

پورا نام احمد بن عمر بن محمّد الخوافی الخيوقی الخوارزمی ہے

ولادت[ترمیم]

نجم الدین کبریٰ کی ولادت 540ھ 1145ء میں خیوق میں ہوئی

کنیت اور القاب[ترمیم]

انکی کنیت ابوالجناب تھی شیخ ولی تراش سے مشہور تھے اور لقب نجم الدین الکبری اور طامۃ الکبری اورنجم الكبراءتھی وہ عماریاسربدلیسی کے شاگرد تھے

بانی سلسلہ[ترمیم]

آپ خوارزم کے قریب خیوق میں رہتے تھے آپ سلسلہ کبرویہیا ذہبیہ کے بانی تھے ان کے شیخ کا نام شیخ روز بہان الوزان المصری ہے

وفات[ترمیم]

آپ کی تاریخ وفات 10 جمادی الاول 618ھ بمطابق 2 جولائی 1221ء آپ تاتاری یلغار میں مقابلہ کرتے ہوئےشہید ہوۓ

تصنیفات[ترمیم]

  • منازل السائرين
  • فواتح الجمال
  • منہاج السالكين
  • ديوان شعر
  • الخائف الهائم عن لومۃ اللائم
  • طوالع التنوير
  • ہدايۃ الطالبين
  • رِسَالَۃ الطّرق.
  • سر الحدس.
  • طوالع التَّنْوِير.
  • عين الْحَيَاة فِی تَفْسِير الْقُرْآن.[1]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. اردو دائرہ معارف اسلامیہ جلد 22 صفحہ148،جامعہ پنجاب لاہور