واحد اور جمع

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

واحد کا مفہوم (انگریزی: Meaning of Singular) ایک شخص یا ایک چیز کو واحد کہا جاتا ہے۔ یا واحد وہ اسم ہوتا ہے جو ایک شخص یا چیز کو ظاہر کرے۔ مثلاﹰ کتاب، لڑکا، مسجد، استاد، فوج، بلی، شجر، میز، کرسی، وغیرہ۔ جبکہ جمع ایک سے زیادہ شخصوں یا چیزوں کو جمع کہتے ہیں۔ یا جمع وہ اسم ہوتا ہے جو ایک سے زیادہ اشخاص یا اسماء کو ظاہر کرے۔ مثلاً کُتب، لڑکے، مساجد، اساتذہ، افواج، بلیاں، اشجار، میزیں، کرسیاں وغیرہ

جمع کی اقسام[ترمیم]

جمع کی چار قسمیں ہیں

  1. جمع سالم
  2. جمع مکسر
  3. جمع الجمع
  4. اسم جمع

جمع سالم[ترمیم]

واحد سے جمع بناتے وقت اس بات کا خیال رکھا جاتا ہے کہ اگر واحد اسم کے حروف میں کسی بھی قسم کی کوئی تبدیلی نہ ہو تو اس صورت میں اس کے آخر میں کچھ حروف کا اضافہ کر کے اسے جمع بنا لیا جائے تو جمع کی اس صورت کو جمع سالم کہتے ہیں مثلاً حاضر سے حاضرین، ناظر سے ناظرین، معلم سے معلمین، احسان سے احسانات، اکابر سے اکابرین وغیرہ

جمع مکسر[ترمیم]

جمع مکسر اس جمع کو کہتے ہیں جس میں واحد سے جمع بناتے وقت واحد اسم کے حروف کی صورت یا ترتیب بدل جاتی ہے یا واحد کے بعض حروف حذف ہو جاتے ہیں مثلاً علم سے علوم، شیطان سے شیاطین، شعر سے اشعار، کتاب سے کتب، سطر سے سطور وغیرہ

جمع الجمع[ترمیم]

عربی کے بعض ایسے الفاظ ہوتے ہیں جن جمع بنا کر دوبارہ پھر جمع بنا لی جاتی ہے جمع کی ایسی صورت کو جمع الجمع کہا جاتا ہے مثلاً رسم سے رسوم جمع بنتی ہے اور پھر رسومات جمع الجمع بنتی ہے، اسی طرح جوہر سے جواہر جمع بنتی ہے اور پھر جواہرات جمع الجمع بنتی ہے۔

جمع الجمع کی مثالیں
واحد جمع جمع الجمع واحد جمع جمع الجمع
خبر اخبار اخبارات وجہ وجوہ وجوہات
لقب القاب القابات رسم رسوم رسومات
جوہر جواہر جواہرات اسم اسماء اسامی
عجیب عجائب عجائبات لازم لوازم لوازمات
عارضہ عوارض عوارضات رکن ارکان اراکین
حادثہ حوادث حوادثات رقم رقوم رقومات
اکبر اکابر اکابرین دوا ادویہ ادویات

اسم جمع[ترمیم]

بعض اوقات کوئی اسم ایسا ہوتا ہے کہ وہ بظاہرتو واحد معلوم ہوتا ہے لیکن وہ معنی جمع کے دیتا ہے ایسے اسم کو اسم جمع کہتے ہیں جیسے قوم، دستہ، فوج، گچھا، جماعت وغیرہ

اسم جمع کی مثالیں
انجمن انبوہ پنچایت دل انبار ٹیم ٹولی بنڈل
جھنڈ بیڑا پارٹی بقچہ پلٹن جماعت خرمن دستہ
جمعیت درجن خلقت اکٹھ ڈار ڈھیر سپاہ ریوڑ
کارواں قطار سلسلہ فوج فریق قافلہ سوسائٹی طائفہ
غول سینکڑہ کمپنی گٹھا گچھا گلدستہ گلہ لشکر
مجلس مجمع محفل ہجوم یونین رسالہ بھیڑ ذخیرہ

واحد سے جمع بنانے کا قاعدہ[ترمیم]

مذکر اسموں کے لیے[ترمیم]

  1. اگر اسم کے آخر میں ”ا“ ”یا“ ”ہ“ ہو تو ایسی صورت میں اسے یائے مجہول ”ے“ سے بدل لیتے ہیں جیسے گھوڑا سے گھوڑے، کتا سے کتے، بندہ سے بندے، لڑکا سے لڑکے، پردہ سے پردے، اژدہا سے اژدہے وغیرہ
  2. اگر اسم کے آخر میں ”اں“ ہو تو پھر اس صورت میں ”ئیں“ سے بدل دیا جاتا ہے جیسے دھواں سے دھوئیں، رئواں سے روئیں، کنواں سے کنوئیں وغیرہ
  3. جن اسموں کے آخر میں مندرجہ بالا علامتوں میں سے کوئی علا مت نہیں پائی جاتی تو ان کے واحد جمع کی صورت یکساں رہتی ہے جیسے درخت ہرا ہو گیا، درخت ہرے ہو گئے، شہر آباد ہو گیا، شہرآباد ہو گئے، ڈاکو مارا گیا، ڈاکو مارے گئے وغیرہ۔ البتہ مجرور یا مفعول ہونے کی صورت میں درخت کی جمع درختوں اور شہر کی جمع شہروں بھی استعمال ہوتی ہے۔
  4. بعض صورتوں میں کنواں جمع کنوئیں اور کنوئوں، دھواں کی جمع دھوائیں اور دھوئوں اور گائوں کی جمع گائووں ہوتی ہے۔

مونث اسموں کے لیے[ترمیم]

  1. اگر اسم کے آخر میں”یا“ ہو تو ایسی صورت میں صرف نون غنہ”ں“ اور اگر یائے معروف”ی“ ہو تو ”اں“ کا اضافہ کردیتے ہیں جیسے چڑیا سے چڑیاں،کہانی سے کہانیاں، لڑکی سے لڑکیاں، گڑیا سے گڑیاں وغیرہ
  2. اگر اسم کے آخر میں”ن“ ہو تو ”یں“ اور اگر”وائو“ یا الف ہو تو”ئیں“ کا اضافہ کرتے ہیں مثلاً دلھن سے دلھنیں، پڑوسن سے پڑوسنیں، آرزو سے آرزوئیں، دوا سے دوائیں، خوشبو سے خوشبوئیں، گھٹا سے گھٹائیں وغیرہ
  3. بعض اسموں کے آخر میں”یں“ کا اضافہ کردینے سے جمع بن جاتی ہے جیسے کتاب سے کتابیں، خبر سے خبریں، میز سے میزیں، عورت سے عورتیں، بھینس سے بھینسیں، گائے سے گائیں، بھیڑ سے بھیڑیں وغیرہ

واحد اور جمع کی مثالیں[ترمیم]

واحد جمع واحد جمع واحد جمع واحد جمع واحد جمع واحد جمع
اصل اُصول آلہ آلات اشارہ اشارات اجر اجور اسم اسما اشتہار اشتہارات
افق آفاق اکبر اکابر ابد آباد امارت امارات افسر افسران آفت آفات
اخ اخوان ادب آداب آیت آیات امام ائمہ الم آلام اہل آہالی
اسلوب اسالیب امت امم آخر اواخر اب آباء اثر آثار اجنبی اجانب
ادیب ادباَ احسان احسانات ارذل اراذل استاد اساتذہ افغان افاغنہ اقتباس اقتباسات
اقلیم اقالیم اقنوم اقانیم اَمر(حکم) اوامر امیر امراَ اول اوائل بخار بخارات
بصر ابصار بیت (گھر) بیوت بصیرت بصائر برکت برکات باب ابواب ب رہان براہین
بحر ابحار، بحور بدن ابدان بستان بساتین برج بروج بیت (شعر) ابیات تصویر تصاویر
تقریر تقاریر تاجر تجار تجویز تجاویز تعبیر تعبیرات تدبیر تدابیر تحفہ تحائف
تشریح تشریحات توقع توقعات تاریخ تواریخ تفصیل تفاصیل تجربہ تجربات تفسیر تفاسیر
تبرک تبرکات تجلی تجلیات تحقیق تحقیقات تخمینہ تخمینات ترجمہ تراجم ترکیب تراکیب
تصریح تصریحات تصنیف تصانیف تصور تصورات تکلیف تکالیف تلمیذ تلامذہ تمثیل تماثیل
توجیہ توجیحات تنبیہ تنبیہات ثقہ ثقات ثمر اثمار ثابت ثوابت جاہل جہلا، جہال
جواب جوابات جذبہ جذبات جسم اجسام جرم اجرام جرم جرائم جوہر جواہر
جن جنات جماد جمادات جزو اجزا جہت جہات جبل جبال جد اجداد
جریدہ جرائد جنس اجناس جید جیاد حاضر حاضرین حکمت حِکم حد حدود
حرکت حرکات حوراَ حور حدیث احادیث حال احوال حاجت حاجات حق حقوق
حضرت حضرات حادثہ حادثات حاکم حکام حقیقت حقائق حبیب احباب حرف حروف
حکیم حکما حاجی حجاج حافظ حفاظ حالت حالات حجاب حجابات حُر احرار
حس حواس حشرہ حشرات حکایت حکایات حکم احکام حیوان حیوانات خطرہ خطرات
خدمت خدمات خنزیر خنازیر خطا خطایا خاطر خواطر خیمہ خیام خلق خلائق
خلف اخلاف خاتون خواتین خرچ اخراجات خصلت خصائل خادم خدام خبر اخبار
خزینہ خزائن خط خطوط خطبہ خطبات خطیب خطباَ خلق اخلاق خلیفہ خلفاء
خواہش خواہشات خیال خیالات دوا ادویہ درجہ درجات دیہہ دیہات داعی داعیان
دہر دہور دین ادیان دار ادیار دقیقہ دقائق دعویٰ دعاوی دکان دکانات
دفتر دفاتر دیوان دواوین دولت دول دائرہ دوائر دَبر ادبار دستور دساتیر
دعا ادعیہ دفینہ دفائن دلیل دلائل دور ادوار دین دیون دینار دنانیر
ذہن اذہان ذرہ ذرات ذکر اذکار ذخیرہ ذخائر ذریعہ ذرائع ذکی اذکیہ
رسالہ رسائل رقم رقوم رب ارباب راکب رکاب روایت روایات روضہ ریاض
رفیق رفقاَ رائے آراَ رایہ رایات رسم رسوم، رسومات رعیت رعایا رکن ارکان
رسول رُسل ریح ریاح رقعہ رقعات رمز رموز روح ارواح رئیس روساَ
زائر زائرین زوج ازواج زائد زوائد زمانہ ازمنہ سن اسنان سبب اسباب
سر اسرار سلاح اسلحہ سلطان سلاطین سابق سوابق ساکن ساکنان سعی مساعی
سند اسناد سیف سیوف سانحہ سانحات سلسلہ سلاسل سنت سنن سبق اسباق
سورت سور سجدہ سجود سفیر سفراَ سید سادات ساحل سواحل سیرت سیر
سد سدود سفر اسفار سلف اسلاف سطر سطور سفینہ سفن شعر اشعار
شیطان شیاطین شخص اشخاص شریف شرفا شکل اشکال شریر اشرار شک شکوک
شراب اشرابہ شہید شہدا شر شرور شبہ شبہات شریک شرکا شاعر شعرا
شجر اشجار شعاع اشعہ شغل اشغال شفقت شفقات شے اشیا صلہ اصلہ
صبح اصباح صورت صور صوم صیام صحابی صحابہ صالح صالحین صنم اصنام
صفت صفات صنف اصناف صدمہ صدمات صوت اصوات صف صفوف صاحب اصحاب
صانع صناع صنعت صنائع ضلع اضلاع ضد اضداد ضرب المثل ضرب المثال ضرر اضرار
ضمیر ضمائر طبیب اطبا طالبہ طالبات طبق اطباق طلسم طلسمات طائفہ طوائف
طفل اطفال طالب طلبہ طالب طلاب طرف اطرف طائر طیور طبقہ طبقات
طبیعت طبائع طعام اطعمہ ظاہر ظواہر ظلمت ظلمات ظلم مظالم ظن ظنون
ظرف ظروف عام عوام عارضہ عوارض عرق عروق عازم عازمین عامل عمال
عابد عباد عمل اعمال عاقل عقلا عاشق عشاق عجیب عجائب عالم عالمین، عوالم
عدو اعدا عالم علما عارف عارفین عزیز اعزہ عادت عادات عبادت عبادات
عبد عباد، عبید عدد اعداد عرضی عرائض علم علوم عقل عقول عقیدہ عقائد
عزم عزائم عطا عطایاَ عہد عہود عین عیون عسکر عساکر عمر اعمار
عضو اعضاَ عنصر عناصر عطیہ عطیات علم اعلام علت علل عید اعیاد
عندلیب عنادل عنایت عنایات عیب عیوب عمارت عمارات عنکبوت عناکب غذا اغذیہ
غنیمت غنائم غم غموم غرض اغراض غنی اغنیاَ غیر اغیار غیب غیوب
غائب غائبین غیم غیوم غلط، غلطی اغلاط غزل غزلیات غریب غرباَ فرد افراد
فائدہ فوائد فضل فضول فاضل فضلا فعل افعال فصیح فصحاَ فوج افواج
فاتح فاتحین فکر افکار فیض فیوض فرمان فرامین فقیر فقراَ فتنہ فتن
فاصلہ فواصل فلک افلاک فساد فسادات فقرہ فقرات فن فنون فرعون فراعنہ
فہم افہام فقیہ فقہا فریضہ فرائض فتح فتوح فتویٰ فتاویٰ فضلہ فضلات
قرینہ قرائن قطرہ قطرات قائدہ قواعد قدم اقدام قوم اقوام قاری قارئین
قبر قبور قندیل قنادیل قسم اقسام قید قیود قصیدہ قصائد قطر اقطار
قدیم قدما قلب قلوب قصہ قصص قوت قوٰی قافیہ قوافی قصبہ قصبات
قاضی قضاۃ قبیلہ قبائل قریب اقربا قانون قوانین قسط اقساط قصر قصور
قطب اقطاب قطعہ قطعات قول اقوال کتاب کتب کافر کفار کوکب کواکب
کاتب کاتبین کسر کسور کبیرہ کبار کبیرہ کبائر کاغذ کاغذات کرامت کرامات
کلمہ کلمات کمال کمالات کیفیت کیفیات لطیفہ لطائف لون الوان لذت لذات
لفظ الفاظ لازمہ لوازم لطف الطاف لذیذ لذائذ لباس البسہ لمحہ لمحات
لقب القاب لغت لغات لسان السنہ لوح الواح محنت محن مبلغ مبلغین
مثل امثال منتظم منتظمین مخزن مخازن مال اموال مذہب مذاہب مسجد مساجد
مجاہد مجاہدین محفل محافل مرحلہ مراحل مائع مائعات مثال امثلہ مرثیہ مراثی
محاورہ محاورات مشرق مشارق معنی معانی ملت ملل منظر مناظر موقد مواقد
محل محلات مائع موائع مدرسہ مدرسین مترجم مترجمین مجمع مجامع مدیر مدیران
متعلم متعلمین مسکن مساکن مظہر مظاہر مصدر مصادر معبد معابد مخرج مخارج
محقق محققین مطلب مطالب منارہ منائر مشغلہ مشاغل مدرسہ مدارس مقبرہ مقابر
مضمر مضمرات موج امواج منزل منازل مبلغ مبالغ مبلغ مبلغین مرض امراض
محدث محدثین مقالہ مقالات مقام مقامات موت اموات ملحد ملاحدہ مجلس مجالس
مطبع مطابع مکان مکانات مدبر مدبرین مدینہ مدائن مراسلہ مراسلات مرتبہ مراتب
مسکین مساکین معجزہ معجزات ممبر ارکان مسئلہ مسائل مفہوم مفاہیم موضع مواضع
مقابلہ مقابلے منبر منابر مصلحت مصالح مطالبہ مطالبات منظوم منظومات مشہور مشاہیر
معلم معلمین منتظم منتظمین ملک ملائکہ ملک املاک ملک ممالک ملک ملوک
مشکل مشکلات مصع مصائع موقع مواقع معاملہ معاملات مصاحب مصاحبین مقدار مقادیر
معدن معدنیات معدن معادن معقول معقولات مقصد مقاصد مضمون مضامین مومن مومنین
مکتب مکاتب مکتوب مکاتیب ملبوس ملبوسات ممکن ممکنات منظم منظمین منصب مناصب
منعفت منافع منقول منقولات موضوع موضوعات مصنوع مصنوعات مطبوعہ مطبوعات مصیبت مصائب
نفس نفوس ناظر ناظرین نسب انساب نقش نقوش ناصح ناصحین نتیجہ نتائج
نادر نوادر نعمت نعم نبات نباتات نغمہ نغمات ناصر انصار نبی انبیاء
نیت نیات نوع انواع نصحیت نصائح نفس انفاس نور انور نجم نجوم
ندیم نِدما نظیر نظائر نظر انظار نسخہ نسخہ جات نقطہ نقاط نکتہ نکات
وحشی وحوش وزیر وزراَ واسطہ وسائط واقع واقعات ورق اوراق ولی اولیاء
وجہ وجوہ وفد وفود وصف اوصاف ولایت ولایات ورد اوراد وقف اوقاف
وطن اوطان وہم اوہام وزن اوزان وقت اوقات وصیت وصایا ولد اولاد
وسیلہ وسائل وضع اوضاع وظیفہ وظائف وکیل وکلا ہدف اہداف ہدایت ہدایات
ہمت ہمم ہدیہ ہدایا ہندو ہنود ہرم اہرام یتیم یتامیٰ یوم ایام

حوالہ جات[ترمیم]

[1][2]

  1. آئینہ اردو قواعد و انشاء پرزادی
  2. آئینہ اردو