بشریٰ انصاری

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
بشریٰ انصاری
BushraAnsariLuxStyleAwards.jpg
 

معلومات شخصیت
پیدائش 15 مئی 1956 (65 سال)[1]  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
کراچی  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of Pakistan.svg پاکستان  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
مادر علمی لاہور کالج برائے خواتین یونیورسٹی  ویکی ڈیٹا پر (P69) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ گلو کارہ،  اداکارہ اور ادکارہ،  ٹی وی پروڈیوسر  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اعزازات
ویب سائٹ
ویب سائٹ باضابطہ ویب سائٹ  ویکی ڈیٹا پر (P856) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
IMDb logo.svg
IMDB پر صفحہ  ویکی ڈیٹا پر (P345) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

بشریٰ انصاری کراچی سے تعلق رکھنے والی پاکستان ٹیلیویژن کی مقبول اداکارہ، میزبان اور پروڈیوسر ہیں۔ آپ پاکستان کے مشہور صحافی احمد بشیر کی بیٹی ہیں۔

تعلیم اور ذاتی زندگی[ترمیم]

بشری نے ابتدائی تعلیم لاہور کے لیڈی گرفن اسکول سے اور انٹرمیڈیٹ لاہور کالج فار ویمن یونیورسٹی سے حاصل کی اور 1977ء میں وقارالنسا کالج راولپنڈی سے گریجویٹ کی ڈگری حاصل کی۔ انہوں نے 11 جون 1978ء کو ٹی وی پروڈیوسر اقبال انصاری سے شادی کی۔ بشری پہلی بار انھی کے ایک ڈراما میں نمودار ہوئیں اور اس کے بعد ان کے اعلی ڈراموں کا سلسلہ شروع ہو گيا۔

کیریئر[ترمیم]

بشری انصاری نے اداکاری کا آغاز اقبال انصاری کی پروڈکشن میں بننے والے ڈرامے سے کیا۔ اس کے بعد وہ مسلسل ڈراموں میں کام کرتی رہیں۔پی ٹی وی کے متعدد مقبول ٹی وی شو میں وہ نظر آتی رہیں جن میں آنگن ٹیڑھا، شو تائم، شو شا، رنگ ترنگ، ایمرجنسی وارڈ اور مزاحیہ ٹی وی سیریز ففٹی ففٹی۔ [2] [3] [4] [5] انھوں نے مزاحیہ اداکاری کے ساتھ ساتھ سنجیدہ اداکاری میں بھی اپنا لوہا منوایا۔ اداکاری کے علاوہ بشری نے گلوکاری اور ماڈلنگ بھی کی ہے۔ انہیں ان کی فنی خدمات کے اعتراف میں حکومت پاکستان کی جانب سے 1989ء میں پرائڈ آف پرفارمنس سے نوازا گیا۔

ڈرامے اور ٹیلی فلمیں[ترمیم]

ٹیلی فلمیں[ترمیم]

  • ابھی تو میں جوان ہوں
  • ہوں بہو
  • موہے بھول گئے سنوریا
  • خالہ گرم مصالحہ
  • مائی چیمی کا فیصلہ

ڈرامے[ترمیم]

ایمرجنسی وارڈ

  • نیلی دھوپ [7]
  • کچھ دل نے کہا
  • امراؤ جان ادا
  • مہر النساء
  • مکان
  • اماوس
  • کس کی آئے گی بارات [8]
  • آذر کی آئے گی بارات
  • ڈولی کی آئے گی بارات
  • کاکے کی آئے گی بارات
  • میرا نصیب
  • کتنی گرہیں باقی ہیں
  • بلقیس کور [9]

بشری جیو ٹیلیویژن کے پروگرام برنچ ود بشری میں بھی میزبانی کرتی رہی ہیں جو ہر اتوار کو دکھایا جاتا تھا۔

فلمیں[ترمیم]

  • جوانی پھر نہیں آنی (2015)
  • ہو من جہاں (2016)
  • جوانی پھر نہیں آنی 2

ایوارڈ اور اعزازات[ترمیم]

  • ہم خواتین لیڈر ایوارڈ کی طرف سے پاکستان ستارہ خواتین [10]
  • 2020 میں بشری انصاری ستارہ امتیاز کے لئے نامزد ہوئیں
  • 23 مارچ 2021 کو صدر پاکستان کی طرف سے سالانہ سول ایوارڈز کے دوران آرٹس کے شعبہ میں خدمات کے سلسلے میں انہیں ستارہ امتیاز سے نوازا گیا۔[11]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. آئی ایم ڈی بی - آئی ڈی: https://wikidata-externalid-url.toolforge.org/?p=345&url_prefix=https://www.imdb.com/&id=nm2558798 — اخذ شدہ بتاریخ: 9 جولا‎ئی 2016
  2. "Bushra Ansari". IMDb. اخذ شدہ بتاریخ 13 دسمبر 2017. 
  3. Shah، Saud. "Bushra Ansari Drama List, Family, Height, Age, Family, Net Worth". Pakistani.PK – Your Local Guide to Business Listings, Restaurants, Hotels & Product Reviews. اخذ شدہ بتاریخ 13 دسمبر 2017. 
  4. "A session with Bushra Ansari". The Nation. اخذ شدہ بتاریخ 13 دسمبر 2017. 
  5. "Bushra Ansari marks Universal Children's Day". The Nation. اخذ شدہ بتاریخ 13 دسمبر 2017. 
  6. Instep (5 August 2018). "The gravitas of Bushra Ansari". TNS – The News on Sunday. اخذ شدہ بتاریخ 25 مارچ 2019. [مردہ ربط]
  7. Umar، Mahjabeen Mankani | Muhammad (12 February 2015). "The 'purity' in the industry is missing: Bushra Ansari". Dawn. Pakistan. اخذ شدہ بتاریخ 26 مارچ 2019. 
  8. "Bushra Ansari announces comeback with laughter-laden 'Aayegi Baraat' series". Daily Pakistan Global. اخذ شدہ بتاریخ 25 مارچ 2019. 
  9. "Why I love Bilqees Kaur". اخذ شدہ بتاریخ 26 مارچ 2019. 
  10. Hasan، Shazia (2020-02-21). "First ever Hum Women Leaders Awards celebrates Pakistan's iconic trailblazers". Images (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 27 جون 2020. 
  11. بشری انصاری کو 23 مارچ 2021 کوحکومت پاکستان کی طرف سے ستارہ امتیاز سے نوازا گیا