کمال احمد رضوی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

کمال احمد رضوی پاکستان کے مشہور و معروف ڈراما نگار، مصنف اور اداکار ہیں جنھوں نے پاکستان میں ڈراما نگاری کے فن کو بامِ عروج پر پہنچایا۔

حالات زندگی[ترمیم]

کمال احمد رضوی یکم مئی 1930ء کو بہار، ہندوستان کے ایک قصبے “گیا“ میں پیداہوئے۔ 1951ء میں پاکستان آ گئے کچھ عرصہ کراچی میں رہے پھرلاہورمنتقل ہو گئے۔ 1958ء میں صرف انیس سال کی عمر میں تھیٹر کا کیرئرشروع کیا۔ اور اپنی ساٹھ سالہ فنی زندگی میں یادگار ڈراموں سے اپنی پہجان بنائی 1965ء میں پاکستان ٹیلی وژن کے لاہور اسٹوڈیو کے قیام کے بعد پہلی دفعہ الف نون شروع کیا جس میں انہوں نے خود الّن کا اوررفیع خاورنے ننھے کا کردار ادا کیا۔ الف نون پی ٹی وی کا مقبول ترین پروگرام تھا مختلف سالوں میں چارمرتبہ ٹیلی کاسٹ کیا گیا۔ الف نون کی مقبولیت کا یہ عالم تھا کہ لوگ ایک ہفتے تک انتظار کرتے تھے اور سب کام کاج چھوڑکرالف نون دیکھا کرتے تھے۔ کمال احمد رضوی نے بیس سے زائد ڈرامے تحریر کیے اور خود ہی ان کو ڈائریکٹ بھی کیا اور ان میں اداکاری کے جوہر بھی دکھائے ان کے مشہور ڈراموں میں چور مچائے شور ،میرا ہمدم میرا دوست،آدھی بات ،صاحب بی بی غلام قابل ذکر ہیں-

کمال احمد رضوی بچوں کے مشہور رسالے تعلیم و تربیت کے ساتھ بھی وابستہ رہے نیز شمع اور آئینہ جیسے جرائد کے بھی ایڈیٹر رہے- انہوں نے ریڈیو اور اسٹیج پر بھی کردار نگاری کے جوہر دکھائے ان کا ڈراما شیطان بہت مقبول ہوا-

وفات[ترمیم]

کمال احمد رضوی کا انتقال 17 دسمبر 2015ء شب آٹھ بجے کراچی میں ہوا۔ اس وقت ان کی عمر پچاسی سال تھی ان کو کراچی کے مقامی قبرستان میں سپردخاک کر دیا گیا مگر وہ آج بھی اپنے فن کی بدولت پرستاروں کے دلوں میں زندہ ہیں-

بیرونی روابط[ترمیم]

کمال احمد رضوی سے متلعق مستند معلومات اس لنک پر ملاحظہ کیجیے: -ابن-صفی-کے -ح/ کمال احمد رضوی