غوث بخش بروہی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
غوث بخش بروہی
Ghaos Bux Brohi playing Flute in program of culture department of Sindh in Karachi.jpg

معلومات شخصیت
پیدائش سنہ 1943 (عمر 76–77 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
ضلع سانگھڑ،  سندھ  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
رہائش سرہاری  ویکی ڈیٹا پر (P551) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of Pakistan.svg پاکستان  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ فن کار،  الغوزہ نواز  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اعزازات

غوث بخش بروہی (انگريزی:Ghous Bux Brohi) پاکستان کے صوبہ سندھ میں پیدا ہونے والے معروف الغوزہ نواز اور بانسری نواز ہیں جنہیں صدارتی تمغا برائے حسن کارگردگی کے علاوہ کئی ایوارڈ اور اعزازات سے نوازا گیا ہے۔[1]

حالات زندگی[ترمیم]

غوث بخش بروہی ولد عطا محمد بروہی 1943ء میں گاؤں کھڈڑو ضلع سانگھڑ میں پیدا ہوئے۔ ان کا آبائی گاؤں سرہاری ضلع سانگھڑ تھا، بعد میں کھڈڑو میں مسقل رہائش اختیار کی جہاں ان کی پیدائش ہوئی۔ غوث بخش صرف پرائمری تک تعلیم حاصل کر سکے۔[2]

فنی خدمات[ترمیم]

غوث بخش بروہی نے اپنے فنی سفر کی ابتدا 1965ء میں کی۔ اس نے شروع میں اپنے چچازاد استاد محمد صالح بروہی سے بانسری بجانے کا فن سیکھا۔ بعد میں استاد مصری خان جمالی کے شاگرد حاجی خان چانڈيو سے فن کی تربیت حاصل کی اور پھر بانسری کے ساتھ ساتھ الغوزہ نوازی شروع کی. غوث بخش بروہی کو کلاسیکی موسیقی پر عبور حاصل ہے جس وجہ سے بانسری يا الغوزہ بجاتے موسيقی کے سر بکھیرتے ہیں۔ انہوں نے پہلے نجی محافل میں فن کا مظاہرہ شروع کیا، بعد میں انہوں نے ریڈیو پاکستان اور پاکستان ٹیلی ویژن نیٹ ورک پر متعارف ہوئے اور شہرت پائی۔ وہ پاکستان کے علاوہ کوریا، اٹلی، لندن، فلپائن،جرمنی،ہالينڈ اور دوسرے ممالک میں فن کا مظاہرہ کر چکے ہیں۔ 1999ء میں ان کی وڈیو سی ڈی ریليز ہوئی۔[3] انہوں نے لوک ورثہ کی جانب سے 2012ء میں منعقد کردہ ثقافتی میلے میں شرکت کی۔[4]۔ اس کے علاوہ انہوں نے کئی مرتبہ لعل شہباز قلندر اور شاہ عبداللطیف بھٹائی کے عرس کے موقعے پر منعقد کانفرنسوں میں شرکت کی اور فن کا بہترین مظاہرہ کیا۔[5] اس وقت یہ نامور فنکار کافی عرصے سے آنکھوں کے مرض میں مبتلا ہیں۔[6]

اعزازات[ترمیم]

غوث بخش بروہی کو 1984ء میں لعل شہباز قلندر گولڈ ایوارڈ اور 1995ء میں شاہ عبداللطيف بھٹائی ایوارڈ دیا گیا۔ 2008ء میں اسے صدارتی تنغا برائے حسن کارکردگی کے اعزاز سے نوازا گیا۔[7]

حوالہ جات[ترمیم]