عبدالحق محدث دہلوی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش

( 958ھ ۔ 1052ھ / 1551ء ۔ 1642ء )

شیخ ابو المجد عبدالحق بن سیف الدین دہلوی بخاری متخلص بہ حقی مشہور اور مایہ ناز عالم دین اور محدث تھے۔ ہندوستان میں علم حدیث کی ترویج و اشاعت میں آپ کا کردار ناقابل فراموش ہے۔

ولادت[ترمیم]

شیخ محقق شیخ عبدالحق محدث دہلوی دہلی میں پیدا ہوئے۔ بیس بائیس سال کی عمر میں علوم دینیہ عقلیہ ونقلیہ مروجہ کی تحصیل سے فارغ ہو گئے۔

سفر حرمین[ترمیم]

996ھ / 1588ء میں حجاز کا رخ کیا اور کئی سال تک حرمین شریفین کے اولیاء کبار اور علماء زمانہ سے استفادہ کیا۔ بالخصوص شیخ عبد الوہاب متقی خلیفہ شیخ علی متقی کی صحبت میں علم حدیث کی تکمیل کی

بیعت و خلافت[ترمیم]

پہلے اپنے والد محترم سے بیعت ہوئے اور پھر ان کی ایما پر سلسلہ قادریہ میں موسیٰ پاک شہید ملتان کے دست اقدس پر بیعت ہوئے۔ مکہ مکرمہ میں شیخ عبد الوہاب متقی سے بھی شرف بیعت تھا اور وہاں سے چار سلسلوں چشتیہ، قادریہ، شاذلیہ اور مدینہ منورہ میں اجازت حاصل تھی۔

جب حرمین سے واپس آئے سلسلہ نقشبندیہ میں خواجہ باقی باللہ سے بھی بیعت کی اور یہ شیخ عبد القادر جیلانی کے روحانی اشارے سے کی تھی۔[1] 50 سال تک دہلی میں مصروف تدریس و تالیف رہے۔

تصانیف[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. تکمیل الایمان، عبد الحق محدث دہلوی، صفحہ 18، سبزواری پبلشر کراچی
  2. مدارج النبوۃ عبد الحق محدث دہلوی صفحہ 9 تا 11 شبیر برادرز لاہور
  3. تکمیل الایمان، عبد الحق محدث دہلوی، صفحہ 14 تا 20، سبزواری پبلشر کراچی