راجندر پرساد

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
راجندر پرساد
(ہندی میں: डाक्टर राजेन्द्र प्रसाद خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقامی زبان میں نام (P1559) ویکی ڈیٹا پر
تفصیل=

صدر بھارت
مدت منصب
26 جنوری 1950 – 14 مئی 1962
وزیر اعظم جواہر لعل نہرو
نائب صدر سروپلی رادھا کرشنن
Fleche-defaut-droite-gris-32.png پہلے صدر
چکرورتی راجگوپال آچاریہ بطور گورنر جنرل ہند
سروپلی رادھا کرشنن Fleche-defaut-gauche-gris-32.png
معلومات شخصیت
پیدائش 3 دسمبر 1884[1][2][3][4]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
وفات 28 فروری 1963 (79 سال)[5][1][2][3][4]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ وفات (P570) ویکی ڈیٹا پر
پٹنہ[5]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام وفات (P20) ویکی ڈیٹا پر
شہریت Flag of India.svg بھارت
British Raj Red Ensign.svg برطانوی ہند  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
جماعت انڈین نیشنل کانگریس  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں سیاسی جماعت کی رکنیت (P102) ویکی ڈیٹا پر
عملی زندگی
مادر علمی کلکتہ یونیورسٹی
پریزیڈنسی یونیورسٹی، کولکاتا  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تعلیم از (P69) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ وکیل،  وسیاست دان  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ ورانہ زبان ہندی[6]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں زبانیں (P1412) ویکی ڈیٹا پر
ملازمت کلکتہ یونیورسٹی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں نوکری (P108) ویکی ڈیٹا پر
اعزازات
IND Bharat Ratna BAR.png بھارت رتن  (1962)  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں وصول کردہ اعزازات (P166) ویکی ڈیٹا پر

ڈاکٹر راجندر پرساد (3 دسمبر، 1884ء – 28 فروری، 1963ء) بھارت کے پہلے صدر تھے۔ وہ بھارت کی آزادی کی تحریک کے اہم رہنماؤں میں سے تھے اورانہوں نے انڈین نیشنل کانگریس کے صدر کے طور پر اہم کردار ادا کیا تھا۔ انہوں نے بھارتی آئین کی تیاری میں بھی اپنا اہم کردار نبھایا تھا جس کے نتیجہ میں 26 جنوری 1950ء کو بھارت ایک جمہوریہ کے طور پر تسلیم کیا گیا۔ صدر ہونے کے علاوہ انہوں نے آزاد بھارت میں مرکزی وزیر کے طور پر بھی کچھ عرصہ کے لیے کام کیا تھا۔ پورے ملک میں انتہائی مقبول ہونے کی وجہ سے انہیں راجندر بابو یا "دے شرتن" کہہ کر پکارا جاتا تھا۔ وہ بہار کے اہم سیاسی لیڈر تھے۔ 1931ء میں برطانوی حکومت نے انہیں نمک مارچ کے لیے پابند سلاسل کیا۔ 1942ء میں بھارت چھوڑو تحریک کے لیے بھی جیل گئے۔ 1946ء کے انخابات کے بعد وہ وزیر برائے کھیتی باڑی بنے۔ 1947ء میں آزادی کے بعد وہ مجلس دستور ساز کے صدر بنے۔ مجلس دستور ساز نے ہی آئین ہند کو مرتب کیا تھا۔

1950ء میں بھارت ایک جمہوری ریاست بنا اور پرساد کو پہلا صدر بھارت نامزد کیا گیا۔ بھارتی عام انتخابات، 1951ء کے بعد پہلی دفعہ بھارتی پارلیمان تشکیل دی گئی اور وہ صدر مقرر ہوئے۔

ابتدائی زندگی[ترمیم]

راجیندر پرساد[7] زمیندار اور مالدار کائستھ ہندو تھے۔[8] ان کی ولادت بھارت کی ریاست بہار کے سیوان ضلع کے زردائی گاوں میں ہوئی تھی۔۔ ان کے والد مہادیو سہائے سنسکرت اور فارسی کے اسکالر تھے۔ ان کی والدہ کملیشوری دیوی ایک مذہبی خاتوں تھیں جو پرساد کو راماین اور مہابھارت کی کہانیاں سنایا کرتی تھیں۔[9][10]

تعلیم[ترمیم]

پانچ برس کی عمر میں ان کے والدین نے انہیں ایک مولری کی شاگردی میں دے دیا تاکہ وی فارسی زبان، ہندی زبان اور حساب سیکھ سکیں۔ رسمی ابتدائی تعلیم حاصل کرنے کے بعد انہیں ضلع اسکول میں داخلہ دلوایا گیا۔ جون 1896ء میں 12 سال کی عمر میں ان کی شادی راج ونشی دیوی سے ہو گئی۔ وہ اپنے بھائی کے ساتھ ٹی کے گھوش اکیڈمی پٹنہ گئے۔ انہوں نے ]]کلکتہ یونیورسٹی]] کا داخلہ امتحان امتیازی نمبرات سے پاس کیا اور انہیں 30 روپیہ ماہانہ وظیفہ ملنے لگا۔

1902ء میں انہوں نے پریزیڈنسی یونیورسٹی، کولکاتا میں بحیثیت سائنس کا طالبعلم داخلہ لیا اور ایف اے کا امتحان پاس کیا۔ مارچ 1905ء میں کلکتہ یونیورسٹی سے گریجویشن کیا۔[11]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb12117707v — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ
  2. ^ ا ب دائرۃ المعارف بریطانیکا آن لائن آئی ڈی: https://www.britannica.com/biography/Rajendra-Prasad — بنام: Rajendra Prasad — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017 — عنوان : Encyclopædia Britannica
  3. ^ ا ب Munzinger person ID: https://www.munzinger.de/search/go/document.jsp?id=00000003065 — بنام: Rajendra Prasad — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  4. ^ ا ب Brockhaus Enzyklopädie online ID: https://brockhaus.de/ecs/enzy/article/prasad-rajendra — بنام: Rajendra Prasad — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  5. ^ ا ب مدیر: الیکزینڈر پروکورو — عنوان : Большая советская энциклопедия — اشاعت سوم — باب: Прасад Раджендра — ناشر: Great Russian Entsiklopedia, JSC
  6. http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb12117707v — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ
  7. Janak Raj Jai (1 جنوری 2003)۔ Presidents of India, 1950–2003۔ Regency Publications۔ صفحات 1–۔ آئی ایس بی این 978-81-87498-65-0۔
  8. Tara Sinha۔ Dr. Rajendra Prasad: A Brief Biography۔ Ocean Books۔ آئی ایس بی این 978-81843-0173-1۔ مورخہ 10 مئی 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ Unknown parameter |url-status= ignored (معاونت)
  9. N. Sundarajan۔ Biographies of the First Three Presidents of India۔ Sura Books۔ صفحات 2–4۔
  10. M.K. Singh (ویکی نویس.)۔ Encyclopaedia Of Indian War Of Independence (1857-1947)۔ Anmol Publications Pvt. Ltd۔ صفحہ 99۔ His father, Mahadev Sahai, was a Persian and Sanskrit language scholar; his mother, Kamleshwari Devi, was a devout lady who would tell stories from the Ramayana to her son
  11. Rajendra Smriti Sanghralaya۔ "Major Life Events of Dr. Rajendra Prasad - First President of India"۔ rss.bih.nic.in۔ مورخہ 3 مارچ 2013 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ Unknown parameter |url-status= ignored (معاونت)

بیرونی روابط[ترمیم]

سیاسی عہدے
ماقبل 
چکرورتی راجگوپال آچاریہ
بطور گورنر جنرل ہند
صدر بھارت
1950–1962
مابعد 
سروپلی رادھا کرشنن

سانچہ:انڈین نیشنل کانگریس کے صدور