سریہ علی ابن ابی طالب (یمن)

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش

-

سریہ علی ابن ابی طالب (یمن)
سلسلہ سرایا نبوی
تاریخ رمضان 10 ہجری
مقام ہمدان
نتیجہ * اہل مذحج شکست کھا کر بھاگ گئے۔
  • بعد میں ان پر اسلام پیش کیا گیا، جو سب مسلمان ہو گئے۔
خطۂ اراضی یمن
متحارب
مسلمان اہل مذحج، یمنی
قائدین
علی ابن ابو طالب نامعلوم
قوت
300
نقصانات
20 آدمی قتل ہوئے

محمد صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم نے علی بن ابی طالب کو بذات خود جھنڈا باندھا، اپنے ہاتھ سے انہیں عمامہ پہنایا اور فرمایا:

ان کے علاقے میں قیام کرو، جب تک وہ خود لڑائی نہ شروع کریں، تم نہ کرنا۔

واقعات[ترمیم]

نتائج[ترمیم]

ماقبل:
سریہ علی بن ابی طالب (بنو طے)
ربیع الآخر 9 ہجری
سرایا نبوی
سریہ علی ابن ابی طالب (یمن)
مابعد:
غزوہ تبوک
رجب 9 ہجری

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]