غزوہ بواط

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش

ہجرت کے تیرهویں مہینے ربیع الاول 2 ہجری میں رسول اکرم ﷺ ایک بار پهر مدینہ منورہ سے سعد بن معاذ کو حاکم بنا کر باہر نکلے. اس مرتبہ آپ ﷺ کے دستہ میں دو صد سوار شامل تهے لشکر کا جهنڈا حضرت سعد بن ابی وقاص کے پاس تها.آپ مسلمان قبیلہ جہینہ کے علاقے میں بواط تک گئے. بواط مدینہ سے 48 میل کے فاصلہ پر ہے ایک ماہ کے قریب وہاں قیام فرمانے کے بعد واپس مدینہ منورہ تشریف لے آئے. اس غزوہ کا مقصد کفار مکہ کے ایک تجارتی قافلہ کا راستہ روکنا تھا۔ اس قافلہ کا سالار امیہ بن خلف جمحی تھا اور اس قافلہ میں ایک سوقریشی کفار اور ڈھائی ہزار اونٹ تھے۔حضور ﷺ اس قافلہ کی تلاش میں مقام بواط تک تشریف لے گئے مگر کفار قریش کا کہیں سامنا نہیں ہوا اس لیے حضور ﷺ بغیر کسی جنگ کے مدینہ واپس تشریف لائے۔ [1]

غزوات و سرایا
پچھلا واقعہ
غزوہ ابواء
غزوہ بواط اگلا واقعہ
غزوہ عشیرہ
  1. زرقانی علی المواہب ج1ص293