سعد بن خولیٰ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

سعدبن خولیٰ یمن کے باشندے غزوہ بدر میں شریک ہونے والے صحابہ میں شامل تھے۔

نام ونسب[ترمیم]

سعد نام،باپ کا نام خولی تھا، نسب نامہ یہ ہے، سعد بن خولیٰ بن سبرہ بن دریم بن قیس بن مالک بن عمیر بن عامر بن بکر بن عامر الاکبر بن عوف بن بکر بن عوف بن عذرہ بن رفیدہ بن ثور بن کلب بن قضاعہ، سبرہ کسی طرح گرفتار ہوکر مشہور بدری صحابی حاطب بن ابی بلتعہ کی غلامی میں آ گئے تھے، حاطب ان کے ساتھ نہایت شفقت اورمہربانی سے پیش آتے تھے۔[1]

اسلام[ترمیم]

ان کے زمانہ اسلام کی تصریح نہیں ملتی، امکان یہ ہے کہ اپنے آقا حاطب کے ساتھ آغاز دعوت اسلام میں مشرف باسلام ہوئے ہوں گے۔

غزوات وشہادت[ترمیم]

قبولِ اسلام کے بعد سب سے پہلے غزوۂ بدر میں شریک ہوکر بدری ہونے کا شرف حاصل کیا اس کے بعد غزوہ احد میں شریک ہوئے اوراسی میں شہادت پائی۔[2]

اولاد[ترمیم]

شہادت کے بعد ایک لڑکا عبد اللہ یادگار چھوڑا، عمر فاروق نے باپ کے خدمات کے صلہ میں انصار کے ساتھ ان کا وظیفہ مقرر فرمایا۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. الطبقات الكبرى المؤلف: أبو عبد اللہ محمد بن سعد المعروف بابن سعد، الناشر: دار الكتب العلميہ بيروت
  2. صحاب بدر،صفحہ 92،قاضی محمد سلیمان منصور پوری، مکتبہ اسلامیہ اردو بازار لاہور