آنسہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
آنسہ
معلومات شخصیت
عسکری خدمات
لڑائیاں اور جنگیں غزوات نبوی  ویکی ڈیٹا پر (P607) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

آنسہ حضرت محمد کے غلام تھے ان کی کنیت ابو مسروح تھی۔

نام ونسب[ترمیم]

سنان نام سلسلہ نسب یہ ہے، سنان بن ابی سنان بن محصن بن حرثان بن قیس بن لبد بن غنم بن دودان بن اسد بن خزیمہ۔آنسہ نام،ابومسروح کنیت،سراۃ میں پیدا ہوئے،نسب سے زیادہ ان کے لیے یہ شرف کافی ہے کہ سرورِ عالم صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کی غلامی کا شرف ان کے پاس تھا۔

اسلام وہجرت[ترمیم]

اس شرف کی بنا پر آنسہ دعوتِ اسلام کے آغاز ہی میں مشرف باسلام ہوئے،اورہجرت کے زمانہ میں مدینہ گئے اور سعد بن خثیمہ کے مہمان ہوئے، اورجب تک زندہ رہے،آنحضرت صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کی خدمت گزاری محبوب مشغلہ رہا۔

غزوات[ترمیم]

بدرواحد وخندق وغیرہ تمام لڑائیوں میں آنحضرتﷺ کے ہمرکاب رہے،[1] پھر 6ھ میں غزوۂ تبوک میں شریک ہوئے اوربیعت رضوان میں جب آنحضرتﷺ نے موت کی بیعت لینی شروع کی تو سنانؓ نے بھی ہاتھ بڑھایا، آنحضرتﷺ نے پوچھا کس چیز پر بیعت کرتے ہو، عرض کیا کہ جو آپ کے دل میں ہے۔[2]ابن عبدالبر نے یہ واقعہ حضرت ابی سنان کی طرف منسوب کیا ہے،جو صحیح نہیں ہے،کیوں کہ ابی سنان بیعت رضوان کے قبل بنو قریظہ میں وفات پاچکے تھے)

وفات[ترمیم]

ابوبکر صدیق کے عہدِ میں وفات پائی۔[3][4]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. (ابن سعد،جلد3،ق1:66)
  2. (ابن سعد،جلد2،ق1،صفحہ:66،واستیعاب:2/707،
  3. اسد الغابہ جلد 1 صفحہ 214حصہ اول مؤلف: ابو الحسن عز الدين ابن الاثير ،ناشر: المیزان ناشران و تاجران کتب لاہور
  4. اصحاب بدر،صفحہ 132،قاضی محمد سلیمان منصور پوری، مکتبہ اسلامیہ اردو بازار لاہور