حارث بن مالک

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

حارث بن مالکغزوہ بدر میں شامل ہونے والے صحابی ہیں یہ ابو واقد لیثی سے بھی مشہور ہیں۔

نام ونسب[ترمیم]

حارث نام، ابو واقد کنیت، نسب نامہ یہ ہے،حارث بن مالک بن اسید بن جابر بن حوثرہ بن عبد مناۃ بن الاشجع بن لیث لیثی

اسلام و غزوات[ترمیم]

ابو واقد ہجرت کے ابتدائی سالوں میں اسلام لائے،قبولِ اسلام کے بعد سب سے اول غزوہ بدر میں ان کی تلوار بے نیام ہوئی،ان کا بیان ہے کہ میں نے بدر میں ایک مشرک کا تعاقب کیامگر قبل اس کے کہ میں وار کروں، ایک دوسرے مسلمان نے اس کا کام تمام کر دیا [1] بدر کے بعد صلحِ حدیبیہ، فتح مکہ اور حنین وغیرہ میں شریک ہوتے رہے۔ ساری عمر مدینہ میں قیام رہا وفات سے کچھ دنون پیشتر مکہ چلے گئے تھے۔

جنگ یرموک[ترمیم]

شام کی فوج کشی میں مجاہدانہ شریک ہوئے،اس سلسلہ کی مشہور جنگ یرموک میں موجود تھے۔

وفات[ترمیم]

مکہ کی خاکِ پاک مقدر میں تھی اس لیے آخر عمر میں مکہ چلے گئے اور یہاں آنے کے ایک سال بعد 68ھ میں وفات پائی، [2][3]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. الاصابہ فی تمیز الصحابہ 5/212 مؤلف: ابن حجر العسقلانی ناشر: دار الكتب العلمیہ - بیروت
  2. اسد الغابہ جلد 3 صفحہ 659حصہ دہم مؤلف: ابو الحسن عز الدين ابن الاثير ،ناشر: المیزان ناشران و تاجران کتب لاہور
  3. صحاب بدر،صفحہ 128،قاضی محمد سلیمان منصور پوری، مکتبہ اسلامیہ اردو بازار لاہو