عباد بن بشر

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

عباد بن بشرایک انصاری صحابی جو نقباء مدینہ میں شامل تھے۔

  • ان کا نسب عباد بن بشر بن وقش بن زغبہ بن زعوراء بن عبد الأشہل الأوسی البدری ہے۔
  • عباد بن بشر بن قیظی صحابی اور ابتدائی مسلمانوں میں شمار ہوتے ہیں والد کا نام عباد بن وقش تھا ،انکی کنیت ابوبشر یا ابو الربیع تھی انکا تعلق قبیلہ بنی نبیت ثم عبد الاشہل سے ہے۔ غزوہ بدر میں شریک تھے،غزوہ یمامہ میں شہید ہوئے انکی عمر 45 سال تھی۔
  • جب قبلہ تبدیل ہوا تو انکا نام اس روایت کے اندر آتا [1] علامہ ابن حجر عسقلانی نے ان کا نام عباد بن نھیک لکھاہے[2]
  • صحیح نام ابن بشر بن وقش بن زغبة بن عبد الأشهل بن جشم بن الحارث بن الخزرج الأوسي الأشهلي، كبار الصحابة سے ہیں، ایک حديث معجم الطبراني میں ہے[3]
  • سیر اعلام النبلا میں ہے کہ یہ قبیلہ بنی اوس کے سردار تھے اپنی قوم کی امامت بھی کراتے تھے مصعب بن عمیر کے ہاتھ پر مسلمان ہوئے کعب بن اشرف یہودی کے قتل میں یہ بھی شریک تھے ابو حذیدفہ بن وتبہ بن ربیعہ کے ساتھ رشتہ مؤخات میں جڑے۔[4] انس روایت کرتے ہیں کہ نبی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کے اصحاب میں دو شخص اندھیری رات میں نبی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کے پاس سے نکل کر گئے، ان میں ایک عباد بن بشر تھے اور دوسرا میرے خیال میں اسید بن حضیر تھے ان دونوں کے ہمراہ چراغوں کی طرح (کوئی چیز) تھی، جو ان کے سامنے روشن تھے، پھر جب وہ علاحدہ ہو گئے، تو ان میں سے ہر ایک کے ساتھ ایک ہو گیا، یہاں تک کہ وہ اپنے گھر پہنچ گیا[5]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. معجم الکبیر الطبرانی
  2. فتح الباری
  3. المزي في تهذيب الكمال
  4. سیر اعلام النبلا
  5. صحیح بخاری:جلد اول:حدیث نمبر 456