قیس بن ابی صعصہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
قیس بن ابی صعصہ
معلومات شخصیت

قیس بن ابی صعصہ غزوہ بدر میں شریک قبیلہ خزرج کے انصار صحابی ہیں۔
ابوصعصعہ کانام عمروبن زید بن عوف بن مبذول بن عمروبن غنم بن مازن بن نجار ہے۔انصاری خزرجی مازنی ہیں۔بیعت عقبہ اوربدرمیں شریک تھے۔رسول خدا صلی اللہ علیہ وسلم نے ان کو بدرمیں ایک حصہ لشکرکاسرداربنایاتھا۔یہ عروہ اورابن شہاب اورابن اسحاق کا قول ہے۔ یحییٰ بن بکیراورسعد بن ابی مریم نے ابن لہیعہ سے انھوں نے حبان بن واسع سے انھوں نے اپنے والد سے انھوں نے قیس بن ابی صعصعہ سے روایت کی ہے کہ انھوں نے عرض کیایارسول اللہ میں کتنے ونوں میں قرآن ختم کیاکروں آپ نے فرمایاپندرہ دن میں انھوں نے عرض کیاکہ میں اپنے کو اس سے بھی زیادہ قوی دیکھتاہوں چنانچہ یہ چند روز تک ایک ہفتہ میں قرآن ختم کیاکیے جب ان کی عمر بہت زیادہ ہوگئی اوریہ اپنی آنکھوں میں پٹی باندھنے لگےاس وقت پندرہ روزمیں قرآن ختم کرنے لگےکہتے تھے کاش میں نے نبی صلی اللہ علیہ وسلم کی اجازت قبول کرلی ہوتی۔ان کا تذکرہ تینوں (ابن مندہ ابو نعیم ابن عبد البر) نے لکھاہے۔

 ابوعمرنے اس حدیث کو اس تذکرہ میں نہیں لکھابلکہ اس سے پیشترکے تذکرہ میں یعنی قیس بن صعصعہ کے نام میں لکھاہے یہ دونوں درحقیقت ایک ہیں۔[1]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. اسد الغابہ جلد7صفحہ 843حصہ پنجم مؤلف: ابو الحسن عز الدين ابن الاثير ،ناشر: المیزان ناشران و تاجران کتب لاہور