عبد اللہ بن مخرمہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

عبد اللہ بن مخرمہ عزیغزوہ بدر میں شامل ہونے والے صحابہ میں شامل ہیں۔ ذو الہجرتین(ہجرت حبشہ اور ہجرت مدینہ میں شامل) تھے۔

  • ان کا پورا نسب عبد الله بن مخرمہ بن عبد العزی بن ابي قيس بن عبد ود بن نصر ابن مالك بن حسل بن عامر بن لؤی ہے، ابو محمد ان کی کنیت ہے۔ یہ عبد اللہ اکبر کے نام سے مشہور ہیں بنو مالک بن کنانہ سے تعلق تھا مدینہ منورہ میں ان کے اور فروہ بن عمرو بن ودقہ کے درمیان بھائی چارہ تھا[1]
  • غزوہ بدر، غزوہ احد اور جملہ غزوات میں شریک رہے جنگ یمامہ میں شریک تھے۔ رسول اللہ ﷺ کے ساتھ ان کا نسب فہر پر جا کر ملتا ہے ان کی والدہ ام نہیک بنت صفوان ہیں۔
  • انہوں نے دعا کی تھی کہاے اللہ مجھے اس وقت تک موت نہ آئے جب تک اپنے بند بند کو تیری راہ میں زخم رسیدہ نہ دیکھوں،جنگ یمامہ میں ان کا ہر عضو زخمی تھا،ابن عمر فرماتے کہ میں ان کے پاس آخری وقت پہنچا انہوں نے مجھ سے پوچھا روزہ داروں نے روزہ افطار کر لیا میں نے بتایا کہ ہوچکا کہنے لگے میرے منہ میں پانی ڈال دو جب میں ڈول لیکر پہنچا تو تو وہ اہنے آخری سانس پورے کر چکے تھے۔
  • 12ھ میں یمامہ میں شہید ہوئے اس وقت 41 سال عمر تھی [2]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. اسد الغابہ ،مؤلف: أبو الحسن عز الدين ابن الاثير الناشر: دار الفكر بيروت
  2. اصحاب بدر،صفحہ 104قاضی محمد سلیمان منصور پوری، مکتبہ اسلامیہ اردو بازار لاہور