ابو برزہ اسلمی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

ابوبَرزہ اسلمی صحابی رسول، ان کی کنیت ہے اصل نام نضلہ بن عُبید تھا اصحاب صفہ سے تھے۔[1] نَضلہ نام ، کنیت ابوبرزہ، والد کا نام عُبید ، قبیلۂ بنو اسلم سے تعلق رکھتے ہیں۔ یہ اپنی کنیت ابوبرزہ سے مشہور ہیں۔ ابوبرزہ اسلمی قدیم الاسلام ہیں۔ انہوں نے غزوہ خیبر، فتحِ مکہ اور غزوہ حنین میں شرکت کی ہے۔ خود فرماتے ہیں! ’’غزوت مع رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم ستاّ أوسبعاً ‘‘ میں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے ساتھ چھ یا سات غزوے میں شریک رہا ہوں۔ [2] انہوں نے ہی فتحِ مکہ کے موقع سے عبدالعزی بن خطل ٭کو رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے حکم سے قتل کیا ہے مدینہ منورہ میں رہنے کے بعد بصرہ چلے گئے اور وہیں ایک عرصہ تک حضرت امیرمعاویہ کے ساتھ رہے ابن الکلبی کی راوایت میں ہے کہ بصرہ میں سکونت اختیار کرلی۔

وفات[ترمیم]

ان کی تاریخِ وفات میں بڑا اختلاف ہے۔ علامہ ابن حجر عسقلانی نے صحیح بخاری میں ان پر ملامت کرنے وا شخص سے متعلق ذکر کردہ روایت اور ان کے حاکموں اور گورنروں پر عیب لگانے کے قصہ کی روشنی میں بیان کیا ہے کہ ان کا انتقال 65ھ میں ہوا ہے۔ [3]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. حلیۃالاولیا ، ج 2 ص 32
  2. اسد الغابہ جلد 5 صفحہ 31
  3. سیر اعلام النبلاء جلد 3 صفحہ 41