عون بن جعفر

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

عون بن جعفر (عربی: عون بن جعفر بن أبي طالب) ایک صحابی تھے۔ جو جعفر طیار کے بیٹے تھے اور اسلام کے پیغمبر محمد کے رشتہ دار تھے۔[1][2]

نام و نسب[ترمیم]

عون بن جعفر طیار کی کنیت ابوالقاسم ہے حضرت جعفر ابن ابی طالب کے بیٹے ہیں اگرچہ سن ولادت واضح بیان نہیں ہوا لیکن چونکہ واقعہ کربلا میں 54 یا 57 سال کے تھے لہذا امکان ہے کہ 4 ھ یا 7 ھ کوحبشہ میں ولادت ہوئی ہوگی۔

عصر نبی[ترمیم]

یعقوبی کے نقل کے مطابق حضرت رسول اکرمؐ نے جنگ موتہ میں حضرت جعفر طیار کی شہادت کے بعد سال ہشتم ہجری میں عون بن جعفر اوران کے بھائی عبداللہ و محمد کواپنی گود میں بٹھایا اورپیارکرتے رہے۔ [3] ایک روایت کے مطابق رسول اکرمؐ نے حضرت جعفرطیار کے بیٹوں کوبلایا اورنائی کو بلاکر کہا کہ ان بچوں کے سر کی اصلاح کرے اورپھرفرمایا:عون خلقت اوراخلاق میں میری شبیہ ہے۔ [4]

عصر علی[ترمیم]

جناب عون کا شمار حضرت علی ؑ کے یار و انصار میں ہوتا ہے حضرت علیؑ کے ہمراہ جنگوں میں بھی شریک رہے حضرت ام کلثوم بنت علی (حضرت زینب صغری) کاعقد حضرت علی ؑ نے عون سے کیاتھا۔ [5]

عصر حسنین و شہادت[ترمیم]

حضرت علیؑ کی شہادت کے بعد ہمیشہ امام حسن وحسین علیہماالسلام کے ساتھ رہے یہاں تک کہ جب حضرت امام حسین علیہ السلام یزید بن معاویہ کے مظالم کی وجہ سے مدینہ سے روانہ ہوئے تو حضرت عون بھی اپنی زوجہ محترمہ (ام کلثوم) کے ہمراہ اپنے مولا کے ساتھ اس جہاد میں شریک رہے اور روز عاشور حضرت علی اکبرؑ کی شہادت کے بعد حضرت امام ؑکی اجازت سے وارد میدان ہوئے 30 سوار اور 18 پیادے واصل جہنم کیے لیکن زید رقاد جہنمی نے آپ کے گھوڑے کوزخمی کردیا جس کی وجہ سے آپ گھوڑے پرنہ سنبھل سکے پھر اس ملعون نے تلوار کاوار کرکے شہیدکردیا۔

ان کے رجز کوتاریخ نے یوں نقل کیا ہے:

ان تنکرونی فانا بن جعفر شہید صدق فی الجنان ازہر

یطیر فیہا بجناح اخضر کفی بہذٰا شرفاً فی المحشر [6]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Ibn Saad/Bewley p. 299.
  2. Muhammad ibn Saad. Kitab al-Tabaqat al-Kabir, vol. 8. Translated by Bewley, A. (1995). The Women of Madina, p. 196. London: Ta-Ha Publishers.
  3. تاریخ یعقوبی، ج 2، ص 65
  4. الاصابہ، ج 4، ص 74 ، نمبرشمار 6111۔ یہ واقعہ تفصیل کے ساتھ بیان ہوا ہے۔
  5. تنقیح المقال، ج 2، ص 355
  6. مقتل الحسینؑ ، خوارزمی، ج 2، ص 31

سانچے[ترمیم]